کرکٹر ذوالقرنین حیدر PCB کی امداد کے منتظر

کرکٹر ذوالقرنین حیدر(Zulqarnain Haider) معدے کے عارضے میں مبتلا ہوگئے ہیں، وہ غیر ملکی لیگ کے دوران معدے کی بیماری کا شکار ہوئے ہیں۔

لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ذوالقرنین حیدر نے کہا کہ عمان میں باسی کھانا کھانے سے معدے میں انفیکشن ہوا۔

انہوں نے کہا کہ وطن واپسی پر اسپتال میں علاج کرایا تاہم بیرونِ ملک علاج کے اخراجات نہیں اٹھا سکتا۔

ذوالقرنین حیدر کا یہ بھی کہنا ہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) نے رابطہ کیا اور ایک ٹیم اسپتال بھیجی تھی، امید دلائی گئی کہ میڈیکل کے اخراجات میں سپورٹ کی جائے گی، امید ہے کہ جلد میرے بل کلیئر کر دیے جائیں گے اور یہ میرا حق بھی ہے۔

ذوالقرنین حیدر کی بیٹی نے کیا کہا؟
اس حوالے سے ذوالقرنین حیدر کی بیٹی کا کہنا ہے کہ میرے والد کرکٹ سے وابستہ رہے لیکن انہیں اب نوکری کی ضرورت ہے۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ میرے والد اب باہر جا کر کھیلنے کے قابل نہیں ہیں، ہم چاہتے ہیں کہ کرکٹ بورڈ میرے والد کے لیے نوکری کا بندوبست کرے۔
واضح رہے کہ 2010ء میں ذوالقرنین حیدر جنوبی افریقہ کے خلاف متحدہ عرب امارات میں کھیلی جانے والی سیریز کے دوران اچانک لندن چلے گئے تھے۔

’جیو نیوز‘ سے بات کرتے ہوئے ذوالقرنین حیدر نے الزام لگایا تھا کہ کرکٹر عمر اکمل نے ان کو دھمکایا تھا۔

انہوں نے کہا تھا کہ 2010ء میں ان لوگوں نے مجھے ڈرایا دھمکایا، میں کم عمر تھا اس لیے دباؤ برداشت نہیں کر سکا تھا۔