سلمان بٹ کو کرکٹ سلیکشن کمیٹی سے فارغ کردیا گیا

اسپاٹ فکسنگ کیس میں سزا یافتہ سلمان بٹ(Salman Butt) کو سلیکشن کمیٹی سے فارغ کردیا گیا۔ چیف سلیکٹر وہاب ریاض سوشل میڈیا پر کڑی تنقید کے بعد سلمان بٹ (Salman Butt)کو اپنے کنسلٹنٹ کے عہدے سے ہٹانے پر مجبور ہوگئے۔لاہور کے قذافی اسٹیڈیم میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے وہاب ریاض کا کہنا تھا کہ سلمان بٹ کو کنسلٹنٹ بنانے کا فیصلہ میرا تھا اور میں ہی یہ فیصلہ واپس لے رہا ہوں۔ سلمان بٹ کرکٹ کو سمجھتے ہیں، سلمان بٹ کا اب نام واپس لے لیا ہے۔

چیف سلیکٹر وہاب ریاض کا کہنا تھا کہ پاکستان کرکٹ بورڈ کو خراب کرنے کی کوشش کی گئی، سلمان بٹ کا نام واپس لینے کا فیصلہ صرف میرا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ویسے تو سلمان بٹ اپنے کیے کی سزا بھگت چکے ہیں، لیکن وہ نہیں چاہتے کہ سلمان بٹ کے بارے مزید غلط باتیں کی جائیں۔

سلمان بٹ کو سلیکشن کنسلٹنٹ بنانے پر سوشل میڈیا پر تبصرے کیے گئے تھے کہ ’13 برس بعد بھی اسپاٹ فکسنگ اسکینڈل تکلیف دیتا ہے‘۔

کسی نے فیصلے کو ’کرکٹ کی تاریخ کا سیاہ دن‘ کہا تو کسی نے کہا ’سلمان بٹ نے بحیثیت کپتان جو کیا ان پر تو گلی کی ٹیپ بال کرکٹ کھیلنے پر بھی پابندی ہونی چاہیے۔‘

2010 کے دورۂ انگلینڈ کے اسپاٹ فکسنگ اسکینڈل پر آئی سی سی نے سلمان بٹ پر دس سال کی پابندی لگائی تھی۔

مزیدخبروں کے لیے ہماری ویب سائٹ ہم مارخور وزٹ کریں۔