پنجاب پولیس کی ضمنی انتخابات کیلئے تیاریاں مکمل

آئی جی پنجاب راؤ سردار علی کا کہنا ہے کہ پنجاب پولیس(Punjab Police) کی ضمنی انتخابات کے پر امن انعقاد کیلئے تیاریاں مکمل ہیں، 14 اضلاع کے 20 حلقوں میں سیکیورٹی کے فول پروف انتظامات یقینی بنائے جائیں گے۔

آئی جی پنجاب نے بتایا کہ ضمنی انتخابات کے 3100 سے زائد پولنگ اسٹیشنوں پر 52 ہزار اہلکار و افسران تعینات کیے گئے ہیں، خواتین کے پولنگ اسٹیشنوں پر لیڈی پولیس اہلکار سیکیورٹی کے فرائض انجام دیں گی،لاہور کے 4 حلقوں میں 9 ہزار سےزائد اہلکار تعینات ہوں گے۔

راؤ سردار علی کا کہنا ہے کہ افسران و اہلکار ایس او پیز کے مطابق آج سے ہی فرائض کی ادائیگی یقینی بنائیں گے۔

اس کے علاوہ اسلحے کی نمائش، پرائیویٹ مسلح افراد، لڑائی جھگڑا کرنے والوں کے خلاف کارروائی ہوگی، انتخابی سامان اور بیلٹ پیپرز کی بحفاظت ترسیل کو ہر صورت یقینی بنایا جائے گا۔

آئی جی پنجاب کا کہنا ہے کہ تمام جماعتوں کے امیدواروں سے بلا امتیاز شورٹی بانڈز لے لیے گئے ہیں، نتائج کے اعلان کے بعد ہوائی فائرنگ نہیں کرنے دی جائے گی۔

فواد چوہدری کا پی ٹی آئی کارکنوں کی گرفتاری کاالزام
پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنما فواد چوہدری نے الزام عائد کیا ہے کہ انتخابی مہم میں سرگرم رہنے والے تحریک انصاف کے کارکنوں کو نشاندہی کرکے گرفتار کیا جا رہا ہے۔

لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ عدالت میں کہا تھا کہ حمزہ شہباز کو وزیراعلیٰ رکھیں گے تو یہ دھاندلی کریں گے، ہر حلقے کی صورت حال سے الیکشن کمیشن کو آگاہ کر دیا ہے۔

پی ٹی آئی رہنما نے کہا کہ حمزہ شہباز نے سپریم کورٹ میں کہا میں اچھا بچہ بن کر رہوں گا، حمزہ شہباز جو بطور وزیر اعلیٰ ہیں ان کا کوئی قانونی اور آئینی جواز نہیں، پنجاب میں جس طرح بجٹ پاس ہوا، اس طرح نہیں ہو سکتا۔

فواد چوہدری نے کہا کہ گورنرصاحب نے اپنا ہی الگ اجلاس بلا لیا، اس طرح نہیں ہو سکتا، سندھ سے الیکشن کمیشن کے ممبر نثار صاحب سندھ حکومت سے تنخواہ لے رہے ہیں، حمزہ شہباز کو تو خود ہی سائیڈ پر ہوجانا چاہیے تھا۔