پی ٹی آئی کا کراچی میں نئے بلدیاتی انتخابات کرانے کا مطالبہ

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی)(PTI) نے کراچی میں نئے بلدیاتی انتخابات کرانے کا مطالبہ کر دیا۔اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے پاکستان تحریک انصاف کے مرکزی سیکریٹری جنرل اسد عمر نے کہا کہ کراچی میں مینڈیٹ کو زبردستی اور دھاندلی سے چرایا گیا۔

اسد عمر کا کہنا ہے کہ پہلے انتخابات ملتوی کرنے کی کوشش کی، پھر مینڈیٹ چوری کیا گیا، دھاندلی الیکشن کے دن صبح کے وقت ہی شروع ہو گئی تھی، پی ٹی آئی رہنما امجد آفریدی نے دھاندلی کی ویڈیو بنائی، انہوں نے ویڈیو میں بتایا کہ کیسے 1 ہزار ووٹ پولنگ اسٹیشن لائے گئے۔

انہوں نے کہا کہ امجد آفریدی کی ویڈیو پر دھاندلی کرنے والوں کو نہیں پکڑا گیا، بلکہ جس نے دھاندلی دکھائی اسے گرفتار کر لیا گیا، امجد آفریدی اور اس کے بھائیوں کو گرفتار کر کے تشدد کیا گیا، ان کے بھائی کی ایک آنکھ مکمل ضائع ہو گئی۔

’سب کو نظر آ رہا ہے مینڈیٹ چوری ہو رہا ہے‘
پی ٹی آئی(PTI) رہنما کا کہنا ہے کہ یہ الیکشن کہیں پہاڑوں پر نہیں بلکہ یونین کونسل میں ہو رہا تھا، انتخابی عملے پر پریشر ڈالا گیا تھا، الیکشن کمیشن اس سارے عمل میں بے بس نظر آ رہی ہے، سب کو نظر آ رہا ہے مینڈیٹ چوری ہو رہا ہے تو احتجاج ہوا۔

سابق وفاقی وزیر نے کہا کہ جب عوام نے احتجاج کیا تو پولیس نے پی ٹی آئی ورکرز کو حراست میں لیا، پیپلز پارٹی نے جو بدترین دھاندلی کی اس پر آواز اٹھائی تو تشدد ہوا، حیدر آباد کی 16 یوسیز میں دھاندلی ہوئی، سندھ کے تمام اضلاع اور کراچی میں خوفناک کھیل کھیلا جا رہا ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ کراچی کو دیوار سے لگایا گیا اور مردم شماری غلط ہوئی، شہر کو اپنے حق کے مطابق پیسے نہیں دیے جا رہے، کراچی والوں کو دیوار سے لگایا جا رہا ہے، کل کراچی والے کھڑے ہوئے تو انہیں دہشت گرد کہا جائے گا، شہر نے صوبے کی جماعت کو مسترد کر دیا ہے۔

’فاروق ستار بتائیں MQM پی پی مذاکرات کا ضامن کون تھا؟‘
تحریک انصاف (PTI)کے مرکزی سیکریٹری جنرل نے کہا کہ 2023ء جنرل الیکشن کا سال ہے، ہم نے الیکشن کی تیاری کرنی ہے، فاروق ستار قوم کو بتائیں کہ ایم کیو ایم پیپلز پارٹی مذاکرات کا ضامن کون تھا؟ پاکستان تحریک انصاف میئر اور ڈپٹی میئر کے امیدوار کے لیے نام نہیں دے گی۔

اسد عمر کا کہنا ہے کہ الیکشن کمیشن ایسا ہونا چاہیے جس پر عوام کو اعتماد ہو، پاک سر زمین پارٹی کس نے اور کیسے لانچ ہوئی تھی، سب جانتے ہیں، کراچی کے مقامی الیکشن کے نتائج میں تنظیمی کمزوری کےکم اور انتظامی دھاندلی کےزیادہ اثرات نظر آئے۔

انہوں نے مزید کہا کہ کراچی میں شکست کا تجزیہ ضرور کیا جائے گا، پنجاب میں ضمنی انتخابات پر عمران خان نے تحقیق کرنے کا کہا تھا، عمران خان نے ڈیجیٹل مردم شماری کا اعلان کیا، ابھی تک مردم شماری نہیں شروع ہوئی۔

’جماعت اسلامی کی سیٹیں بھی چھینی گئی ہیں‘
ان کا یہ بھی کہنا ہے کہ جماعت اسلامی کی سیٹیں بھی چھینی گئی ہیں، کراچی مقامی حکومت کے الیکشن کو کسی صورت قبول نہیں کرے گا، ہم مسترد کرتے ہیں، الیکشن کمیشن مقامی الیکشن کرانے میں ناکام ہوا، استعفیٰ دینا چاہیے۔

مزیدخبروں کے لیے ہماری ویب سائٹ ہم مارخور وزٹ کریں۔