حکمران عمرہ کرنے نہیں، تیل لینے جاتے ہیں: مفتاح اسماعیل

سابق وزیرِ خزانہ مفتاح اسماعیل(Miftah Ismail)نے کہا ہے کہ حکمران عمرہ کرنے نہیں جاتے، تیل لینے جاتے ہیں، جب پاکستان اپنے لیے کام نہیں کرتا تو دوسرے ہمارے لیے کیوں کریں گے۔لاہور کے الحمرا ہال میں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ یہاں اشرافیہ کی برتری کی حکومت ہے، سول حکمرانوں میں کام کرنے کی صلاحیت نہیں ہے۔

مفتاح اسماعیل (Miftah Ismail)نے کہا کہ ہماری بدترین گورننس ہے، ہمیں پاکستان کے مستقبل کی فکر کرنی چاہیے، میں نے تھوڑی سی بہتر حالت میں معیشت چھوڑی تھی۔

سابق وزیرِ خزانہ نے کہا کہ آئی ایم ایف سے پیسے ملے تو 15 دن بعد فارغ کر دیا گیا۔

مفتاح اسماعیل نے کہا کہ پرانی روایت کے مطابق سبسڈی دینے کی عادت اپنالی گئی، حفیظ شیخ نے آئی ایم ایف کے پروگرام دیے۔

انہوں نے مزید کہا کہ شوکت ترین نے پاور سیکٹر کو 172 ارب دیے، سیاستدان اپنے کندھوں سے پیچھے دیکھتے ہیں، ضرورت اپنا اسٹرکچر تبدیل کرنے کی ہے.

سابق وزیرِ خزانہ مفتاح اسماعیل نے کہا کہ فوج کا کردار تبدیل کرنے کی بھی ضرورت ہے، ٹیکس اور بچوں کی تعلیم کی شرح بڑھائیں۔

مزیدخبروں کے لیے ہماری ویب سائٹ ہم مارخور وزٹ کریں۔