طاقتوروں کو این آر او دیا جائے گا تو ملک کا کوئی مستقبل نہیں، عمران خان

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) – چیئرمین پاکستان تحریک انصاف (PTI) عمران خان نے کہا کہ طاقتوروں کو این آر او دیا جائے گا تو اس ملک کا کوئی مستقبل نہیں۔

جمعرات کو وکلاء کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ملکی حالات میں سب سے بڑا بحث طلب موضوع رجیم چینج ہے، قائداعظم غلام ملک میں آزاد شخص تھے، کہا کہ پاکستان اس لیے نہیں بنا تھا کہ ایک غلامی سے نکل کر دوسری غلامی میں آجائیں۔ کسی بھی جمہوریت میں میڈیا پر ایسا دباؤ نہیں ڈالا گیا جو اس دور میں ہے۔

سابق وزیراعظم نے کہا کہ تمام ترقی پذیر ممالک کا مسئلہ ہی یہ ہے کہ وہاں طاقتور کو نہیں پکڑا جاتا، کمزور کو جیل میں ڈالا جاتا ہے۔ کہا کہ ہر سال غریب ممالک سے 1700 ارب ڈالر منی لانڈرنگ کے ذریعے غریب ممالک سے امیر ممالک میں جاتا ہے۔ غریب ممالک کا 7 ہزار ارب ڈالر باہر آف شور اکاؤنٹس میں پڑا ہے۔

عمران خان نے کہا کہ ریاست مدینہ اُصولوں پر بنی تھی جس میں سب سے اہم اُصول انصاف تھا۔ ملک کے بڑے بڑے ڈاکوؤں کو 1100 سو ارب کی چھوٹ قابل مذمت ہے۔ برطانیہ میں کورونا کا قانون توڑنے پر وزیراعظم کے خلاف عدم اعتماد کی تحریک آرہی ہے۔